Posts

شھادت حضرت سیدنا عثمان غنی رضی اللہ عنہ

شھادت حضرت سیدنا عثمان غنی رضی اللہ عنہ
قاری محمد انصار احمد نوری ، ممبر امام احمد رضا مومنٹ علماء بورڈ، بنگلور

نام و نسب: آپؓ کا نام’’ عثمان‘‘ کنیت ابو عمر اور ذوالنورین ہے، پانچویں پشت میں آپکا سلسلہ نسب رسول اللہ ﷺ کے شجرۂ نسب سے مل جاتا ہے ۔ آپ کی نانی ام حکیم جو حضرت عبد المطلب کی بیٹی تھیں وہ حضور ﷺ کے والد گرامی حضرت عبد اللہؓ کے ساتھ ایک ہی پیٹ سے پیدا ہوئی تھیں۔ اس رشتہ سے حضرت عثمان غنیؓ کی والدہ حضور ﷺ کی پھوپھی کی بیٹی تھیں ۔ آپ کی پیدائش عام الفیل کے چھ سال بعد ہوئی۔
ْؓقبول اسلام: حضرت عثمان غنیؓ ان حضرات میں سے ہیں جن کو حضرت ابو بکر صدیقؓ نے اسلام کی دعوت دی تھی۔ آپ قدیم الاسلام ہیں یعنی ابتدائے اسلام ہی میں ایمان لے آئے تھے آپ نے حضرت ابو بکرؓ ،حضرت علی، اور حضرت زید، کے بعد اسلام قبول کیا۔جب حضرت عثمان غنیؓ حلقۂ بگوش اسلام ہوئے تو ان کا پورا خاندان بھڑک اٹھا یہاں تک کہ آپ کا چچا حکم بن ابی العاص اس قدر برہم ہوا کہ آپ کو پکڑ کر ایک رسی سے دیا اور کہا کہ اگر تم نے اپنے باپ دادا کا دین چھوڑ کر ایک دوسرانیا مذہب اختیار کر لیا ہے۔ جب تک کہ تم اس نئے مذہب کو نہیں چھوڑو گے ہم تمہیں نہیں چھوڑیں گے اسی طرح باندھ کر رکھیں گے۔آپ نے فرمایا : میرے جسم کے ٹکڑے تکڑے کر ڈالو یہ مجھے منظور ہے مگر دل سے دین اسلام نکل جائے یہ مجھے منظور نہیں۔اس طرح آپکا استقلال دیکھا تو مجبور ہو کر آپ کو رہا کر دیا۔
شہادت کی خبر:حضرت سہل بن سعدؓ سے روایت ہے کہ ایک روز نبی کریم ﷺ ،حضرت صدیق اکبر،عمر فاروق، عثمان غنی رضی اللہ عنہم احد پہاڑ پر تھے، یکا یک وہ ہلنے لگا تو رسول اللہ ﷺ نے فرمایا :اے احد!تو ٹھہر جا کہ تیرے اوپر صرف ایک رسول، یاصدیق،اور دو
شہید ہیں (تفسیر معالم التنزیل ص ۲۱۶) اس حدیث سے معلوم ہوا کہ حضور ﷺ پہاڑوں پر بھی اپنا حکم نافذ فرماتے تھے۔ اور یہ بھی ثابت ہوا کہ خدائے تعالیٰ نے آپ کو علم غیب عطا فرمایا تھا کہ برسوں پہلے حضرت عمرؓ اور عثمان غنیؓ کے شہید ہونے کے بارے میں حضور ﷺ خبر دے رہے ہیں ۔ اعلیحضرت علیہ الرحمۃ فرماتے ہیں:
اور کوئی غیب کیا تم سے نہا ں ہو بھلا ۔ جب نہ خدائی چھپا تم پہ کروروں درود
اور حضرت عثمان غنیؓ خوب جانتے تھے کہ حضور ﷺ کا فرمان بدل نہیں سکتا ہے اسی لئے آپؓ اپنی شہادت کا انتظار فرما رہے تھے۔حضرت ابن عمرؓ سے روایت ہے وہ فرماتے ہیں کہ رسول اکرم ﷺ نے مستقبل میں ہونے والے فتنہ کا ذکر کیا تو ارشاد فرمایا کہ یہ شخص فتنہ میں ظلم سے قتل کیا جائے گا ۔ یہ کہتے ہوئے آپ نے حضرت عثمان غنیؓ کی طرف اشارہ فرمایا:
حضرت عثمان غنیؓ اور احادیث:
حضرت عثمان غنی کے فضائل میں بہت سی حدیثیں بھی وارد ہیں۔ چنانچہ حضرت عائشہ صدیقہؓ سے روایت ہے کہ حضور نبی کریم ﷺ نے ایک روز حضرت عثمان غنیؓ سے فرمایا کہ اے عثمان! خدائے تعالیٰ تجھ کو ایک قمیص پہنائے گا یعنی خلعت خلافت سے سرفراز فرمائے گا۔ پھر اگر لوگ اس قمیص کے اتارنے کا تجھ سے مطالبہ کریں تو ان کی خواہش پر اس قمیص کو مت اتارنا یعنی خلافت کو نہ چھوڑنا۔ اسی لئے جس روز ان کو شہید کیا گیا۔ انہوں نے حضرت ابو سہلہؓ سے فرمایا کہ حضور ﷺ نے مجھ کو خلافت کے بارے میں وصیت فرمائی تھی۔ اسی لئے میں اس وصیت پر قائم ہوں اور جو کچھ مجھ پر بیت رہی ہے اس پر صبر کر رہاہوں ۔(ترمذی)
آپ کی خلافت:
حضرت علامہ جلال الدین سیوطیؓ اپنی مشہور کتاب تاریخ الخلفا میں فرماتے ہیں کہ زخمی ہونے کے بعد حضرت عمر فاروقؓ کی طبیعت جب زیادہ ناساز ہوئی تو لوگوں نے آپ سے عرض کیا کہ یا امیر المومنین آپ ہمیں کچھ وصیتیں فرمائیے اور خلافت کے لئے کسی کا انتخاب فر ما دیجئے۔ تو آپ نے فرمایا علاوہ ان چھ اصحاب کہ جن سے رسول اکرم ﷺ راضی اور خوش ہو کر اس دنیا سے تشریف لے گئے میں کسی اور کو مستحق نہیں سمجھتا ہوں۔پھر آپ نے حضرت عثمان،علی،طلحہ،زبیر،عبد الرحمن ،سعد رضی اللہ تعالیٰ عنہم اجمعین کے نام لئے ۔جب حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ کا وصال ہوگیا، لوگ ان تجہیز و تکفین سے فارغ ہو گئے تو تین دن کے بعد خلیفہ کو منتخب کرنے کے لئے جمع ہوئے۔ حضرت عبد الرحمن بن عوف رضی اللہ عنہ نے لوگوں سے فرمایا کہ پہلے تین آدمی اپنا حق تین آدمیوں کو دے کر دست بردار ہو جائیں ، لوگوں نے اس بات کی تائید کی تو حضرت زبیرحضرت علی کو ، حضرت سعد بن وقاص حضرت عبد الرحمن کو، اور حضرت طلحہ حضرت عثمان کو اپنا حق دے کر دست بردار ہو گئے۔حضرت عبد الرحمن بن عوف رضی اللہ عنہ نے فرمایا انتخاب کا کام میرے سپرد کردیں۔ قسم خدا کی میں آپ لوگوں میں سے بہتر اور افضل شخص کا انتخاب کروں گا۔آپ نے حضرت علی و حضرت عثمان غنی سے عہد و پیمان لیا اس کے بعد آپ نے حضرت عثمان غنی رضی اللہ عنہ کے ہاتھ پر بیعت کر لی اور ان کے بعد حضرت علی رضی اللہ عنہ نے بھی بیعت کر لی، اس کے بعد تمام مہاجرین و انصار نے
۔حضرت عبد الر حمن بن عوف نے حضرت علی رضی اللہ عنہ کے بجائے حضرت عثمان کو اس لئے خلیفہ منتخب کیا کہ جو بھی صائب الرائے تنہائی میں ان سے ملتا وہ یہی مشورہ دیتے کہ خلا فت حضرت عثمان کو ہی ملنی چاہئے وہ اس کے زیادہ مستحق ہیں۔

آپ کی شہادت:

حضرت عثمان غنی رضی اللہ عنہ کا دور خلافت کل بارہ سال رہا۔ شروع کے چھ برسوں میں لوگوں کو آپ سے کوئی شکایت نہیں ہوئی بلکہ ان بر سوں میں وہ حضرت عمررضی اللہ عنہ سے بھی زیادہ لوگوں میں مقبول رہے اس لئے کہ حضرت عمرؓ کے مزاج میں کچھ سختی تھی اور آپ میں کوئی سختی کا وجود نہ تھاآپؓ بہت با مروت تھے۔آخری چھ برسوں میں بعض گورنروں کے سبب لوگوں کو آپ سے شکایت ہو گئی۔

My Faith is that the Progress of Islam

My Faith is that the Progress of Islam

“My Faith is that the Progress of Islam does not depand on the use of Sword bu its believers, but the reult of the supreme sacrifice of Hussain.”

– Mahatma Gandhi

Gandhi on Imam Hussain

Hadith: Son of Adam

Hadith: Son of Adam

A son of Adam becomes old but two things in him become young: greed for wealth and greed for more life. [Bukhari & Muslim]

Hadith of the Day: Knowledge

Hadith of the Day: Knowledge

Narrated by Hazrat Anas  رضي الله تعالى عنه . : Prophet Muhammad صلى الله عليه وسلم said,
“He who left to seek the knowledge of deen, remains on the path of Allah untill he returns.”

[ Sunan e Tirmizi, Kitaab: Al Ilmu An Rasoolillaah صلى الله عليه وسلم , Baab:Fazlu Talb il ilm]

Audio Quran

The Audio Version of Quran.
Urdu Translation: Kanzul Iman
By Imam Ahmed Rida Khan

1.Surah Al-Fatihah

2.Surah Al-Baqarah

3.Surah Aal-e-Imran

4.Surah An-Nisaa

5.Surah Al-Maidah

6.Surah Al-An’aam

7.Surah Al-Aa’raaf

8.Surah Al-An’faal

9.Surah At-Taubah

10.Surah Yunus

11.Surah Hood

12.Surah Yusuf

13.Surah Ar-Ra’ad

14.Surah Ibrahim

15.Surah Al-Hijr

16.Surah An-Nahl

17.Surah Al-Israa

18.Surah Al-Kahf

19.Surah Maryam

20.Surah Taa’ha

21.Surah Al-Anbiyaa

22.Surah Al-Hajj

23.Surah Al-Muminun

24.Surah An-Noor

25.Surah Al-Furqan

26.Surah Ash-Shu’araa

27.Surah An-Naml

28.Surah Al-Qasas

29.Surah Al-Ankabut

30.Surah Ar-Room

31.Surah Luqman

32.Surah As-Sajdah

33.Surah Al-Ah’zaab

34.Surah Sabaa

35.Surah Faatir

36.Surah Yaa’sin

37.Surah As-Saaf’faat

38.Surah Suad

39.Surah Az-Zumar

40.Surah Al-Mu’min

41.Surah Haa’meem

42.Surah Ash-Shuraa

43.Surah Az-Zukhruf

44.Surah Ad-Dukhan

45.Surah Al-Jasiyah

46.Surah Al-Ahqaaf

47.Surah Muhammad

48.Surah Al-Fat’h

49.Surah Al-Hujuraat

50.Surah Qaaf

51.Surah Az-Zaariyaat

52.Surah At-Tur

53.Surah An-Najm

54.Surah Al-Qamar

55.Surah Ar-Rahmaan

56.Surah Al-Waaqi’ah

57.Surah Al-Hadid

58.Surah Al-Mujaadilah

59.Surah Al-Hashr

60.Surah Al-Mumtahinah

61.Surah As-Saff

62.Surah Al-Jumu’ah

63.Surah Al-Munafiqun

64.Surah At-Taghaabun

65.Surah At-Talaaq

66.Surah At-Tahrim

67.Surah Al-Mulk

68.Surah Al-Qalam

69.Surah Al-Haaq’qah

70.Surah Al-Ma’aarij

71.Surah Nuh

72.Surah Al-Jinn

73.Surah Al-Muzzammil

74.Surah Al-Muddassir

75.Surah Al-Qiyamah

76.Surah Ad-Dahr

77.Surah Al-Mursalaat

78.Surah An-Nabaa

79.Surah An-Nazi’aat

80.Surah Abasa

81.Surah At-Takwir

82.Surah Al-Infitaar

83.Surah Al-Mutaffifeen

84.Surah Al-Inshiqaaq

85.Surah Al-Burooj

86.Surah At-Taariq

87.Surah Al-Aa’la

88.Surah Al-Gashiyah

89.Surah Al-Fajr

90.Surah Al-Balad

91.Surah Ash-Shams

92.Surah Al-Lail

93.Surah Adh-Dhuhaa

94.Surah Alam-Nashrah

95.Surah At-Teen

96.Surah Al-Alaq

97.Surah Al-Qadr

98.Surah Al-Baiyinah

99.Surah Al-Zilzaal

100.Surah Al-Aadiyaat

101.Surah Al-Qaari’ah

102.Surah At-Takasur

103.Surah Al-Asr

104.Surah Al-Humazah

105.Surah Al-Feel

106.Surah Quraish

107.Surah Al-Maa’un

108.Surah Al-Kausar

109.Surah Al-Kaafirun

110.Surah An-Nasr

111.Surah Al-Lahab

112.Surah Al-Ikhlaas

113.Surah Al-Falaq

114.Surah Al-Naas

The Hadith of the Day

The Hadith of the Day:

The Prophet Muhammad Sallalahu Alahi Wasallam Said: If anyone Keeps Goods Till The price rises, He is A Sinner. – Muslim

10613055_766259550095434_566981490399762601_n

Companions in the Grave

Companions in the Grave
Said Yazid al-Ruqashi ‘I have heard it said that when the deceased is set in his tomb his works amass around him and are given to speak by Allah, so that they say, “O bondsman, alone in his pit! Your family and friends are now separated from you, so that today we are your sole companions.”
(Ihya’ of al-Ghazali)

The Islamic manner of having one’s sins Forgiven

The Islamic manner of having one’s sins Forgiven

Anyone who recites after each Salah Istighfaar three times, Ayat-ul-Kursi, the three Quls once, ‘SubhanAllah’ thirty three times, ‘Alhumdillah’ thirty three times, and Allahu Akbar thirty four times and the following once, then Allah will forgive all his sins, even if they are more than the foam of the ocean.

La ilaha illAllahu Wahdahu la Shareeka Lahu lahul Mulku wa Lahul Hamdu wa Huwa ‘Ala Kulli Shay’in Qader

 “There is no God but Allah, He is the one and He has no partner. For Him is the Kingdom and Praise and He has the power over all things possible.”

 Supplication:  After every Salaah, A person should place their right hand on the forehead, drawing it towards the back of the head and recite the Following:

Bismillahil-ladhi la llaha illa Huwar-Rahmanur Raheem Allahumma
Adhhid ‘Annil Hamma wal Huzana

Allah In The Name Of, Who Is The Only One Worthy Of Worship, The Most Affectionate, the Most Merciful. O Allah! Remove from me my worries and grief.”